alwatantimes
Image default
قومی

کسان تحریک ملتوی، تنظیمیں حکومت کے وعدے پر پیش رفت کا ہر ماہ جائزہ لیں گی

نئی دہلی:سینکت کسان مورچہ نے جمعرات کو حکومت کی طرف سے کسانوں کے مطالبات کو پورا کرنے کے وعدے کے بعد ایک سال سے جاری کسانوں کی تحریک کو معطل کرنے کا اعلان کیا سنگھو بارڈر پر اس کا اعلان کرتے ہوئے کسان لیڈر بلویر راجیوال نے کہا کہ 11 دسمبر کو کسان دہلی کی سرحدوں اور ملک کے دیگر مقامات سے دھرنا اٹھائیں گے انہوں نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ احتجاج کو معطل کرنے کا فیصلہ مورچہ کی میٹنگ میں حکومت کی طرف سے ان کے مطالبات کو پورا کرنے کے وعدے کے بعد کیا گیا۔ پریس کانفرنس میں تحریک کی قیادت کرنے والی دیگر تنظیموں کے کسان رہنما بھی موجود تھے۔مسٹر راجیوال نے بتایاکہ “ہم ہر ماہ حکومت کے وعدوں کو پورا کرنے کے کام کا جائزہ لیں گے اور اسی کی بنیاد پر مزید حکمت عملی طے کی جائے گی۔ ,انہوں نے کہا کہ 11 دسمبر کو کسان وجے دیوس منائیں گے اور اس دن سے وہ کسان جو دہلی اور دیگر مقامات پر ایک سال سے زیادہ عرصے سے پھنسے ہوئے ہیں اپنے گھروں کو لوٹنا شروع ہو جائیں گے۔ چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت کی ہیلی کاپٹر حادثے میں موت اور کل ان کی آخری رسومات کے پیش نظر کسان ہفتہ کو وجے دیوس منائیں گے۔کسان 13 دسمبر کو گولڈن ٹیمپل بھی جائیں گے۔کسان لیڈر یوگیندر یادو نے کہا کہ حکومت نے وعدہ کیا ہے کہ وہ کم از کم امدادی قیمت (ایم ایس پی) پر ایک کمیٹی تشکیل دے گی۔ ایم ایس پی کے تحت خریداری موجودہ پوزیشن پر جاری رہے گی۔ حکومت نے ایم ایس پی کی بھی یقین دہانی کرائی۔ مورچہ 15 جنوری کو دہلی میں میٹنگ کرے گا جس میں حکومت کے وعدوں کو پورا کرنے کے لیے کئے گئے اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا۔انہوں نے بتایاکہ اس تحریک کے ذریعے کسانوں نے عزت اور مان کو حاصل کی ہے، اتحاد پیدا کیا ہے اور انہیں اپنی سیاسی طاقت کا احساس دلایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے ایم ایس پی پر ایک کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے، ضابطہ فوجداری کے تحت پرالی جلانے پر کوئی کارروائی نہیں کی جائے گی اور ان کسانوں کے خاندانوں کو امداد دی جائے گی جو احتجاج کے دوران مارے گئے تھے۔ انہوں نے احتجاج کرنے والے کسانوں کو نقصان کا معاوضہ دینے اور کسانوں سے بات چیت کے بعد ہی پارلیمنٹ میں بجلی کا بل پیش کرنے کا وعدہ کیا ہے۔ انہوں نے اسے کسانوں کی بڑی فتح قرار دیا۔کسان لیڈر راکیش ٹکیت نے کہا کہ اگر حکومت وعدے پورے نہیں کرتی ہے تو احتجاج کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ محاذ برقرار رہے گا اور وقتاً فوقتاً ملاقات کرکے کسانوں کے مسائل پر بات کی جائے گی۔ 11 دسمبر کو پورے ملک میں وجے دیوس منایا جائے گا۔

Related posts

سال2021: جموں وکشمیر میں سیاسی سرگرمیوں پر غیر یقینی صورتحال ہی سایہ فگن رہی

alwatantimes

منڈکا حادثہ: 29 افراد اب بھی لاپتہ،27افراد ہلاک،لاش کی شناخت کی کوشش جاری

alwatantimes

یوکرین کی صورتحال پر ہندوستان کی نظر

alwatantimes

Leave a Comment