alwatantimes
Image default
سياسات قومی

مودی حکومت مفاد عامہ کی بات کرنے والوں کا منہ بند کررہی ہے: کھڑگے

جے پور: راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف ملکارجن کھڑگے نے مرکز کی مودی حکومت پر مہنگائی پر قابو نہ پانے اور عوامی مفاد میں پارلیمنٹ میں بولنے کا موقع نہ دینے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وہ اپوزیشن کو کام کرنے نہیں دے رہی اورعوامی مفاد میں بولنے والوں کے منہ بند کررہی ہے۔ مسٹر کھڑگے نے آج یہاں کانگریس کی مہنگائی ہٹاؤ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ سچ بولنے اور لکھنے والوں پر مقدمہ درج کیا جاتا ہے اور جو کام کرتے ہیں انہیں کام نہیں کرنے دیا جاتا، یہ ہےمرکزکی بی جے پی حکومت۔انہوں نے کہا کہ ارکان پارلیمنٹ ایوان میں عوامی مفادات کو سامنے رکھنا چاہتے ہیں لیکن انہیں بولنے پر معطل کر دیا جاتا ہے اور حکومت کے وزرا کہتے ہیں کہ یہ ان کا جرم ہے۔ مفاد عامہ کے مسائل اٹھانا جرم ہے تووہ بار بار اٹھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کے مطالبات اور پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کی طرف حکومت کی توجہ مبذول کرانے کی کوشش کی گئی لیکن انہیں موقع نہیں دیا جا رہا ہے اور ان کا منہ بند کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس میں ہمارا قصور نہیں۔ ہم ملکی مفاد میں بات کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، لیکن دس دن ہو گئے ارکان پارلیمنٹ پارلیمنٹ کے باہر بیٹھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایسے مشکل حالات میں آج یہاں لاکھوں لوگ جمع ہوئے ہیں کہ مہنگائی کی مار کس طرح پڑ رہی اور وزیر اعظم نریندر مودی کس طرح سو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں آئے روز اضافہ ہو رہا ہے اور اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی والے کہتے ہیں کہ کانگریس نے 70 سالوں میں کیا کیا۔ جب کہ کانگریس نے 55 سال کے دور حکومت میں جمہوریت اور آئین کی حفاظت کی ہے۔یہی وجہ ہے کہ آج مسٹر مودی وزیر اعظم ہیں۔ اگر اس دور میں جمہوریت اور آئین محفوظ نہ ہوتا تو مسٹر مودی وزیر اعظم نہ بن پاتے۔مسٹرکھڑگے نے کہا کہ ان لوگوں نے جو ہم نے کیا اس کا دو فیصد بھی نہیں کیا۔ مودی حکومت پر اپنے سات سالوں میں کوئی ترقیاتی کام نہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نعرہ دیا گیا کہ سب کا ساتھ، سب کا وکاس۔سب کا ساتھ تو لیاگیا لیکن سب کا ستیہ ناس کردیا گیا۔
کانگریس کے لاکھوں لوگ جیلوں میں گئے اور ملک کے لیے آزادی حاصل کی جب کہ ان کے لوگوں نے ملک کے لیے کچھ بھی نہیں کیا۔

 

Related posts

حکومت آرڈیننس کے بجائے قانون سازی کے عمل کے ذریعے قانون بنانے کی حامی ہے: سیتا رمن

alwatantimes

سابقہ حکومتوں نے درآمدات کو فوقیت دی،ہم ’وکل فار لوکل‘ کے حامی:مودی

alwatantimes

اپوزیشن کو راس نہیں آرہی ڈبل انجن کی ترقی:مودی

alwatantimes

Leave a Comment