alwatantimes
Image default
کھیل

گوتم گمبھیرآئی پی ایل کی لکھنئو فرنچائزی کے مینٹربنے

لکھنئو: انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کی نئی فرنچائزی لکھنئو نے ہفتہ کو سابق ہندوستانی بلے باز گوتم گمبھیر کو ٹیم کا مینٹر مقرر کیا۔اس کی تصدیق کرتے ہوئے، فرنچائز کے مالک سنجیو گوینکا نے ہفتے کے روز کہا کہ دو بار کے آئی پی ایل فاتح کپتان گوتم سپورٹ اسٹاف میں بطور مینٹرشامل ہوں گے۔ گوتم کی تقرری گوینکا کے آر پی ایس جی گروپ کا دوسرا بڑا اعلان ہے، جس نے اکتوبر میں لکھنئو فرنچائز کو 7090 کروڑ روپے کی سب سے مہنگی بولی میں خریدا تھا۔ کولکاتہ نائٹ رائیڈرز اور دہلی کیپٹلس کے سابق کپتان گوتم سے پہلے جمعہ کو زمبابوے کے سابق بلے باز اینڈی فلاور کوٹیم کا ہیڈ کوچ مقرر کیا گیاتھا۔گوینکا اور گوتم دونوں کے قریبی لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ اچھے دوست رہے ہیں اور ان کا کرکٹ ایسوسی ایشن کا منصوبہ ایک طویل عرصے سے بنایا گیا تھا۔ ورلڈ کپ جیتنے والے دہلی کے کرکٹر گوتم طویل عرصے سے لکھنئوٹیم کی تیاری کا حصہ ہیں۔ دونوں کے ایک دوست نے کہا، “گوئنکا کے ٹیم خریدنے کے بعد، اب دونوں کا رشتہ رسمی اور پیشہ ورانہ ہو گیا ہے۔سمجھاجاتا ہے کہ گوتم کے ساتھ، ان کے ایک وقت کے دہلی اور کولکاتہ ٹیم کےساتھی وجے دہیا بھی فرنچائز میں شامل ہوئے ہیں۔ سابق ہندوستانی وکٹ کیپر وجے کو اسسٹنٹ کوچ کے طور پر شامل کیا گیا ہے، جو اس وقت ریاست اتر پردیش ٹیم کے ہیڈ کوچ ہیں۔ٹیم میں گوتم کا خیرمقدم کرتے ہوئے، سنجیو گوینکا نے ان کے بے داغ کیریئر کی تعریف کی۔ گوینکا نے گوتم گمبھیر کی تعریف کرتے ہوئے کہا، “گوتم کا ایک شاندار کیریئر رہا ہے۔ میں کرکٹ کے تئیں ان کی سوچ اور لگن کا احترام کرتا ہوں اور ان کے ساتھ کام کرنے کے لئے پرجوش ہوں۔دوسری طرف، گوتم نے اس بارے میں کہا، “ڈاکٹر گوینکا اورآرپی ایس جی گروپ کا بہت شکریہ کہ مجھے ان کے سیٹ اپ میں یہ شاندار موقع فراہم کیا۔ مقابلہ جیتنے کی آگ آج بھی میرے اندر جلتی ہے۔ ایک فاتح کی میراث چھوڑنے کی خواہش اب بھی مجھے چوبیس گھنٹے بے چین کرتی ہے۔ میں ڈریسنگ روم کے لیے نہیں بلکہ اتر پردیش کے جذبے اور ہمت کے لیے مقابلہ کروں گا۔ مجھے یہ موقع فراہم کرنے کے لیے ڈاکٹر گوینکا اور آرپی ایس جی گروپ کا بہت شکریہ۔ جیت کی بھوک اب بھی میرے اندر موجود ہے، فاتح بننے کی خواہش اب بھی مجھے ہر وقت اکساتی رہتی ہے۔گمبھیر 10سیزن آئی پی ایل میں بطور کھلاڑی کھیل چکے ہیں، 2008 سے 2010 تک وہ اپنی ہوم ٹیم دہلی ڈیئر ڈیولز کا حصہ تھے۔ اس کے بعد وہ 2011 میں کولکاتہ نائٹ رائیڈرز میں شامل ہوئے اور انہیں کپتان کا کردار دیا گیا۔

گمبھیر کی ہی کپتانی میں کے کے آر نے 2012 اور 2014 میں آئی پی ایل کا خطاب جیتا تھا۔ 2018 سیزن کے پہلے کے کے آرنے انہیں ریلیز کردیا تھا اور پھر دہلی ڈیئرڈیولز کے ساتھ انہوں نے بطورکپتان واپسی کی تھی۔ حالانکہ اس سیزن کے وسط میں گمبھیر نے کپتانی چھوڑ دی تھی اور شریئس ائیر کو دوبارہ دہلی کا کپتان بنایا گیاتھا۔
گمبھیر کا بین الاقوامی کریئر بھی شاندار رہا ہے جہاں انہوں نے 58 ٹیسٹ میں 4154 رنز بنائے ہیں۔ جبکہ147 ون ڈے میچوں میں ان کے نام 5238 رن ہیں اور 37 ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں گمبھیر نے ہندوستان کے لیے 932 رنز بنائے ہیں۔ انہوں نے دسمبر 2012 میں تمام طرز کی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیاتھا۔

 

Related posts

متاثر کن ٹیسٹ ڈیبیو کے بعد بولینڈ کی آئی سی سی رینکنگ میں شاندارانٹری

alwatantimes

ہندوستان اور ڈنمارک دونوں نے اپنی اپنی جیت کا دعویٰ کیا

alwatantimes

بر صغیر کے با حیات سنی مفسرین

cradmin

Leave a Comment