alwatantimes
Image default
قومی

انصاف پر مبنی اور شفاف طریقے سے حد بندی ہونی چاہئے: غلام نبی آزاد

جموں:آنجہانی وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے دفعہ 370 کو متعارف کرایا تھا ۔ انصاف پر مبنی اور شفاف طریقے سے حد بندی ہونی چاہئے۔ ان باتوں کا اظہار کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد نے گندوہ بھلیسہ میں نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کیا۔انہوں نے کہا کہ دفعہ 370 کی منسوخی کے بعد جو دعوے کئے گئے تھے وہ سراب ثابت ہوئے۔ انہوں نے بتایا کہ انتظامیہ لوگوں کو بنیادی سہولیات فراہم کرنے میں ناکام ہوئی ہے اور اس سرکار سے کیا اُمید رکھی جاسکتی ہے۔آزاد نے کہا کہ دفعہ 370 کانگریس کی وراثت ہے اور اس کی واپسی کی خاطر ہم اپنی پُر امن جدوجہد جاری رکھیں گے ۔اُن کا کہنا تھا کہ کانگریس کے پہلے وزیر اعظم آنجہانی پنڈت جواہر لال نہرو نے دفعہ 370 متعارف کرایا تھا اور اس کی حفاظت کی خاطر ہم پوری طرح سے تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ دفعہ 370 کی واپسی لوگوں کی لڑائی ہے لہذا ہم اس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔مسٹر آزاد کے مطابق اس قانون کی منسوخی کے بعد لوگ بے روزگار ہوئے ہیں، تعمیر وترقی کا کئی پر نام و نشان نہیں اور لوگوں کو بنیادی سہولیات کے حوالے سے سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔حد بندی کمیشن کی رپورٹ کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں آزاد نے کہا کہ ابھی یہ رپورٹ پوری طرح سے منظر عام پر نہیں آئی ہے لہذا اس پر کچھ بھی کہنا قبل ازوقت ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ انصاف پر مبنی اور شفاف طریقے سے حد بندی ہونی چاہئے تاکہ ہر خطے کو برابری کی بنیاد پر انصاف مل سکے۔غلام نبی آزاد نے سٹیٹ ہڈ کی بحالی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ چناو میں مزید دیری نہیں ہونی چاہئے۔اُن کا مزید کہنا تھا کہ جموں وکشمیر میں ملی ٹینسی کے واقعات میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے۔

Related posts

بی جے پی کے نظریے سے ملک کو بچانا کانگریس کی ذمہ داری ہے: راہل

alwatantimes

لکھیم پور کھیری تشدد: کسانوں کو روند کر قتل کرنے کے ملزم آشیش مشرا کی ضمانت کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی

alwatantimes

قرآن اور سائنس ایک تقابلی جائزہ

cradmin

Leave a Comment