alwatantimes
Image default
بہار جھارکھنڈ

لالو پرساد چارہ گھوٹالہ کے معاملے میں مجرم قرار

رانچی:غیر منقسم بہار کے مشہور چارہ گھوٹالہ کے ڈورنڈا خزانے سے غیر قانونی طور پر نکاسی کے معاملے میں بہار کے سابق وزیر اعلی لالو پرساد یادو کوقصوروار ٹھہرایا گیا ہے۔رانچی میں خصوصی سی بی آئی جج ایس کے ششی کی عدالت نے منگل کو لالو پرساد کو قصوروار قرار دیا۔سی بی آئی عدالت نے لالو سمیت اس کیس سے جڑے 99 ملزمین کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔ابتدائی طور پر ڈورنڈا خزانے سے غیر قانونی طور پر رقم نکالنے کے معاملے میں کل 170 ملزمین تھے جن میں سے 55 ملزمین کی موت ہو چکی ہے۔ اس وقت 99 افراد مقدمے میں شامل ہیں۔ ان میں سے 24 کو ثبوتوں اور گواہوں کی عدم دستیابی پر بری کر دیا گیا ہے اور عدالت نے کل 75 افراد کو مجرم قرار دیا ہے۔ڈورنڈا خزانہ معاملے کی تحقیقات میں سی بی آئی کو 25 سال لگے۔ اس معاملے میں سی بی آئی نے 7 جون 2003 کو عدالت میں سپلیمنٹری چارٹ شیٹ داخل کی تھی۔ اس معاملے میں 26 ستمبر 2005 کو فرد جرم عائد کی گئی تھی۔
ہوٹوار جیل سے دوبارہ ریمس پہنچے:
رانچی: سی بی آئی خصوصی جج ایس کے ششی کی عدالت نے منگل کو آر جے ڈی سپریمو لالو پرساد کو غیر منقسم بہار کے اربوں روپے کے چارہ گھوٹالہ معاملے میں قصوروار ٹھہرایا اور انہیں ضابطے کے مطابق تحویل میں لے کر جیل بھیج دیا۔اس دوران مسٹر پرساد کے وکیل نے ان کی عمر اور بیماریوں کو مدنظر رکھتے ہوئے انہیں اسپتال بھیجنے کی درخواست کی۔ جس کے بعد عدالت نے جیل سپرنٹنڈنٹ کوضابطے کے مطابق کارروائی کرنے کی ہدایت کی۔لالو پرساد کو آج دوپہر تقریباً 2.15 بجے سخت سیکورٹی کے درمیان سی بی آئی کورٹ سے ہوٹوار جیل لے جایا گیا۔ اس دوران جیل سپرنٹنڈنٹ نے فوری طور پر ایک میڈیکل ٹیم تشکیل دی اور لالو پرساد کی صحت کی جانچ شروع کر دی۔ رانچی کے سول سرجن کو بھی صحت کی جانچ کے لیے خصوصی طور پر بلایا گیا تھا، جس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ لالو پرساد جن سنگین بیماریوں میں مبتلا تھے، ان کا علاج جیل کے اسپتال میں ممکن نہیں تھا اور انھیں ریمس بھیجنے کی سفارش کی گئی۔جیل انتظامیہ کی طرف سے تمام ضروری کاغذی کارروائی مکمل کرنے کے فوراً بعد ایمبولینس کا بندوبست کیا گیا اور لالو پرساد کو ریمس کے پیئنگ وارڈ میں داخل کرایا گیا۔یہاں جیسے ہی لالو پرساد کے ریمس پہنچنے کی اطلاع ملی، ریمس انتظامیہ نے بھی اپنی تیاریاں مکمل کر لیں۔ اس سے پہلے بھی لالو پرساد رانچی جیل میں قیام کے دوران مہینوں تک ریمس میں زیر علاج رہے۔ اس وقت ان کا علاج ریمس کے سینئر ڈاکٹر ڈاکٹر امیش پرساد کی قیادت میں کیا جا رہا تھا، لیکن اب ان کا انتقال ہو چکا ہے، اس لیے دیگر ماہر ڈاکٹروں کی ٹیم نے لالو پرساد کے ریمس پہنچتے ہی ان کا علاج شروع کر دیا۔یہاں جیسے ہی لالو پرساد کو ریمس میں لائے جانے کی اطلاع ملی، آرجے ڈی کے سینئر لیڈر شیام رجک، جئے پرکاش یادو، عبدالباری صدیقی، بھولا یادو اور دیگر سینئر لیڈر ریمس کیمپس پہنچ گئے۔ اسی دوران آر جے ڈی کے کارکنوں کی بڑی تعداد بھی ریمس پہنچ گئی۔ اس طرح تقریباً دو گھنٹے کے اندر لالو پرساد ایک بار پھر جیل سے ریمس پہنچ گئے ہیں اور جیسے ہی وہ ریمس پہنچے، لالو پرساد کے اہل خانہ، حامی اور پارٹی لیڈران-کارکنان نے راحت کی سانس لی۔مسٹر پرساد اے کلاس کے قیدی ہیں اور انہیں جیل مینوئل کے مطابق ضروری سہولیات فراہم کی گئی ہیں۔

Related posts

شادی شدہ خاتون کے ساتھ عصمت دری کا معاملہ درج

alwatantimes

گونگی خاتون کی اجتماعی عصمت دری کے بعد قتل

alwatantimes

وزیر اعلیٰ نے سماجی اصلاح مہم کے تحت جائزہ میٹنگ کی

alwatantimes

Leave a Comment