alwatantimes
Image default
کھیل

کرکٹر اینڈریو سائمنڈز کی کار حادثے میں موت

کینبرا: آسٹریلیا کے سابق کھلاڑی اینڈریو سائمنڈز کی کار حادثے میں موت ہو گئی۔ وہ کوئنز لینڈ میں حادثے کا شکار ہو گئے۔سائمنڈز نے 1998 سے 2009 کے درمیان 26 ٹیسٹ اور 198 ون ڈے میچوں میں آسٹریلیا کی نمائندگی کی۔ 46 سالہ کرکٹر کی موت ٹاؤنس ویل کے باہر ایک حادثے میں ہوئی، جہاں وہ ریٹائرمنٹ کے بعد رہتے تھے۔کوئنز لینڈ پولیس نے ایک بیان میں کہاکہ پولیس ایک گاڑی کے حادثے کی تحقیقات کر رہی ہے جس میں گزشتہ رات ہروی رینج میں ایک 46 سالہ شخص کی موت ہو گئی تھی جو کہ ٹاؤنس وِل سے تقریباً 50 کلومیٹر دور ہے۔سائمنڈز 2003 اور 2007 میں آسٹریلیا کی ورلڈ کپ جیتنے والی ٹیم کے دو بار رکن تھے۔ اس کے ساتھ وہ 2000 کے وسط میں ٹیسٹ ٹیم کے اہم رکن بھی تھے۔ سائمنڈز کی موت 2022 میں اب تک آسٹریلیا کے تیسرے کرکٹر کی موت ہے۔ اس سے قبل مارچ میں روڈنی مارش اور شین وارن کا انتقال ہو گیا تھا۔کرکٹ آسٹریلیا کے صدر لوکلان ہینڈرسن نے کہاکہ آسٹریلیائی کرکٹ نے اپنا ایک اور بہترین کھو دیا ہے۔ وہ بہت سے لوگوں کے لیے ایک مہذب شخصیت تھے، جن کو ان کے مداح اور دوست قدر کی نگاہ سے تھے۔اس کے ساتھ ہی دنیائے کرکٹ کے تمام لیجنڈز اور سائمنڈز کے ساتھ کرکٹ کھیلنے والے کئی کھلاڑی تعزیت کا اظہار کر رہے ہیں۔سائمنڈز ایسے آل راؤنڈر تھے جو گیند کو بلا خوف وخطر نشانہ بناتے تھے۔ وہ درمیانی رفتار سے گیند بازی کر سکتا تھا اور ساتھ ہی باؤلنگ میں آف سپن بھی ڈال سکتا تھا۔ اس کے علاوہ وہ ایک بہترین فیلڈر بھی تھے۔برمنگھم میں پیدا ہوئے سائمنڈز انگلینڈ کے لیے کھیل سکتے تھے، لیکن 1995 میں انگلینڈ اے ٹیم میں شمولیت سے انکار کر دیا۔ ون ڈے ٹیم میں ان کا پہلا آسٹریلیا سلیکشن 1998 میں ہوا، لیکن ایک طویل عرصے سے ایسا لگتا تھا کہ وہ اس ٹیلنٹ سے فائدہ نہیں اٹھا سکیں گے۔تاہم 2003 کے ورلڈ کپ کے آسٹریلیا کے افتتاحی میچ میں یہ تاثر بدل گیا۔ جب وہ بیٹنگ کے لیے آئے تو آسٹریلوی ٹیم 86 رنز پر چار وکٹیں گنوا چکی تھی۔ سائمنڈز نے پھر 125 گیندوں پر 143 رنز کی اننگز کھیلی۔ اس کے بعد انہوں نے ون ڈے میں مزید پانچ سنچریاں بنائیں۔2004 میں اپنا ٹیسٹ ڈیبیو کرنے والے سائمنڈز نے 2006-07 میں انگلینڈ کے خلاف باکسنگ ڈے ٹیسٹ کے دوران اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری بنائی۔ حالانکہ اس سنچری سے قبل وہ کچھ نصف سنچریاں بھی بنا چکے تھے۔ان کا ٹیسٹ ڈیبیو 2004 میں ہوا اور ابتدائی میچوں میں چند نصف سنچریاں بھی بنائیں۔یہ 2006-07 میں انگلینڈ کے خلاف باکسنگ ڈے ٹیسٹ تھا جس میں انہوں نے 156 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔انہوں نے 2008 میں سڈنی میں انڈیا کے خلاف میچ میں کیریئر کا بہترین 162 رنز بنائے جو ان کے کیریئر کے سب سے متنازعہ لمحات میں سے ایک بن گیا جب وہ ہربھجن سنگھ کے ساتھ ایک طویل بحث میں الجھ گئے۔ٹی ٹوئنٹی دور کے آغاز کے ساتھ ہی سائمنڈز نے 2004 میں کینٹ کے لیے کھیلتے ہوئے 34 گیندوں پر سنچری بھی بنائی تھی۔ انہیں ڈیکن چارجرز نے 2008 میں پہلی آئی پی ایل نیلامی کے دوران 1.35 ملین امریکی ڈالر میں خریدا تھا۔وہ 2012 میں ریٹائر ہونے سے قبل کوئنز لینڈ، ڈیکن چارجرز اور سرے کے لیے کھیلے۔ بعد میں انہوںنے میڈیا کا رخ کیا اور آسٹریلیا میں باقاعدہ کمنٹیٹربن گئے۔

Related posts

ہندوستان بنام ویسٹ انڈیز ٹی 20 میچ کے لئے ’ایڈن گارڈن‘ ،کولکاتہ میں ایچ اوپی الیکٹرک موبیلٹی باضابطہ ان اسٹیڈیا برانڈ پارٹنر

alwatantimes

واشنگٹن سندر انجری کے باعث اگلے چند میچوں سے باہر ہو سکتے ہیں

alwatantimes

آسٹریلیا نے پاکستان کو یکطرفہ انداز میں 119 رن سے شکست دے کر سیمی فائنل میں جگہ بنائی

alwatantimes

Leave a Comment