alwatantimes
Image default
قومی

بی جے پی کے نظریے سے ملک کو بچانا کانگریس کی ذمہ داری ہے: راہل

ادے پور (راجستھان): کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے اتوار کو کہا کہ راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نفرت اور لڑائی کی سیاست کے ذریعے ملک کو تباہ کرنے کے در پے ہیں انہیں شکست دینا ہے آج یہاں منعقد پارٹی کے سہ روزہ نو سنکلپ کے آخری دن چنتن شیویر سے ملک بھر سے آئے ہوئے مندوبین سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر گاندھی نے کہا کہ ان کی لڑائی بی جے پی کے نفرت اور پھوٹ ڈالنے والے نظریے کے خلاف ہے۔ اس تنظیم نے ملک میں نفرت اور تشدد کا ماحول پیدا کر رکھا ہے۔انہوں نے کہا، “اس نظریے سے لڑنا میری زندگی کا مقصد ہے۔ بی جے پی کے نظریے سے ملک کو بچانا کانگریس کی ذمہ داری ہے۔ ہم اس ملک کے لوگوں کے جذبات کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ جنگ لڑتے رہیں گے۔ میں خوفزدہ نہیں ہوں، میں نے بدعنوانی سے لڑا ہے، اس لیے میں نہیں ڈرتا۔ بی جے پی آئینی اداروں کو تباہ کر رہی ہے اور آئینی اقدار کو توڑ رہی ہے، اس لیے یہ ہم سب کے لیے ایک جنگ بن گئی ہے اور ہمیں اس جنگ کو لڑنا اور جیتنا ہے۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ علاقائی پارٹیاں بی جے پی آر ایس ایس کے نفرت انگیز نظریہ کا مقابلہ نہیں کر سکتیں۔ کیونکہ ان پارٹیوں کی اپنی حدود ہیں اور اس حد میں رہ کر یہ جنگ نہیں لڑی جا سکتی، اس لیے کانگریس اس جنگ کو لڑے گی اور ملک کو برباد کرنے والی پالیسی کے خلاف اپنی لڑائی جاری رکھ کر جیتے گی۔انہوں نے کہا کہ کانگریس پورے ملک کی پارٹی ہے اس لیے موجودہ سیاسی ماحول میں ملک کو نقصان پہنچانے والی طاقتوں کے خلاف لڑنے کے لیے اس تنظیم کو مضبوط کرنا ضروری ہو گیا ہے۔ ہر کارکن کو کانگریس کی جنگ لڑنی ہے اور ملک میں دلتوں، قبائلیوں اور پسماندہ طبقات پر ہو رہے مظالم کے خلاف متحد ہونا ہے اور پارٹی کو عوام تک پہنچا کر عوام کی آواز بنانا ہے اور سماج کے ساتھ بات چیت کرنا ہے۔مسٹر گاندھی نے کہا کہ کانگریس کو مضبوط کرنے کے لئے تمام لیڈروں کو جانا ہوگا اور لوگوں کے درمیان بیٹھنا ہوگا اور ان سے بات چیت کرنا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اگر عوام سے رابطہ نہیں جڑا تو کانگریس پارٹی مضبوط نہیں ہوسکتی۔ انہوں نے کہا، ’’یہ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم لوگوں کے ساتھ کھڑے ہوں اور انہیں بی جے پی اور آر ایس ایس کے تخریبی نظریہ سے بچائیں اور ملک کے لوگوں کو پہلے کی طرح کانگریس کے نظریہ سے جوڑ کر آگے بڑھیں۔‘‘

Related posts

معطل اراکین پارلیمنٹ کی بحالی کے لیے اپوزیشن کا مارچ

alwatantimes

صداقت اور دیانتداری صحافت کے دو اہم ستون ہیں: مولانا عمرین محفوظ رحمانی

alwatantimes

یوکرین سے ملکی شہریوں کی واپسی کے لئے’ آپریشن گنگا‘ ایکشن میں :مودی

alwatantimes

Leave a Comment